Human Rights day: Observe shutdown on Monday JRL to people

Home » Kashmir » Human Rights day: Observe shutdown on Monday JRL to people

By FK WEB DESK on 08/12/2018.

Human Rights day: Observe shutdown on Monday JRL to people

Srinagar, Dec 08: On Human rights day which falls on Monday (10th December) JRL calls for complete shutdown in Valley against continous Human rights violation in J&K.

And urges people to observe black day.

 

 

 

مشترکہ مزاحمتی قائدین جناب سید علی گیلانی ،جناب میرواعظ ڈاکٹرمولوی عمر فاروق اور اسیر زندان جناب محمد یاسین ملک نے اپنے مشترکہ بیان میں حقوق انسانی کے عالمی دن کے موقعہ پر بشری حقوق کے عالمی اداروں اور مہذب اقوام سے جموں وکشمیر میں قابض بھارتی فورسز اور حکمرانوں کی عوام کُش اور بے رحم پالیسیوں کے نتیجے میں گزشتہ کئی دہائیوں سے جاری حقوق انسانی کی سنگین پامالیوں کا سنجیدہ نوٹس لینے کی اپیل کرتے ہوئے کہا ہے کہ 10 دسمبر جو پوری دنیا میں حقوق بشر کے عالمی دن کے طور پر منایا جاتا ہے اور پوری دنیا میں انسانی حقوق کے تحفظ ، انسانی زندگیوں کے احترام اور حفاظت کی بات کی جاتی ہے اور حقوق انسانی کے تحفظ کی ضرورت اور اہمیت کو اجاگر کیا جاتا ہے .
انہوں نے کہا کہ جہاں تک جموں وکشمیرکا تعلق ہے یہاں کے عوام گزشتہ کئی دہائیوں سے انتہائی بدترین اور تکلیف دہ صورتحال سے دوچار ہیں، یہاں کے عوام کے جملہ سیاسی، سماجی اور مذہبی حقوق طاقت کے بل پر سلب کر لئے گئے ہیں ، دنیا کا سب سے بڑا فوجی جماؤ والاخطہ ہونے کے ساتھ ساتھ حقوق انسانی کی بدترین پامالیوں کے ذریعہ یہاں کے عوام سے جینے کا حق بھی چھین لیا گیا ہے ۔ قتل و غارت ، مار دھاڑ، گرفتاریاں ، بندشیں ، قدغنیں، ہراسانیاں یہاں روز کا معمول ہیں۔
انہوں نے کہا کہ تلاشی کے نام پر اسباب خانہ اور مکانوں کی توڑ پھوڑ ، مردوں، عورتوں، بزرگوں، بچوں کی مار پیٹ حتیٰ کہ کمسن بچیوں کو بھی پیلٹ کا نشانہ بنا کر ان کی آنکھوں سے بینائی چھین لینا قابض فورسز نے اپنے فرائض میں چھین لیا اور اس صورتحال کا افسوسناک اور دردناک پہلو یہ ہے کہ حقوق بشر کی عالمی تنظیمیں اور دیگر عالمی برادری کشمیریوں کیخلاف اس بھارتی بربریت پر اپنا ردعمل ظاہر کرنے کے بجائے مجرمانہ خاموشی اختیار کئے ہوئے ہیں ۔
قائدین نے کہا کہ جموں وکشمیر دنیا کا وہ واحد خطہ ہے جہاں جانوروں کے حقوق کے تحفظ کی بات تو کی جاتی ہے مگر انسانوں کے حقوق جس بے دردی کے ساتھ پامال کئے جارہے ہیں مسلمہ انسانی اور جمہوری قدروں کی بیخ کنی کی جارہی ہے اس کی مثال دنیا میں کہیں نہیں ملتی۔
انہوں نے کہا کہ حقوق انسانی کے دن کے حوالے سے مزاحمتی قیادت نے حقوق انسانی ہفتہ منانے کا جو پر امن پروگرام دیا تھا مگر اس پروگرام کو ناکام بنانے کیلئے جس طرح بیجا طاقت اورتشدد کااستعمال کیا گیا ۔ مزاحمتی قائدین اور کارکنوں کو گھروں اور تھانوں میں نظر بند کیا گیا ۔ زندگی کے مختلف مکاتب فکر سے وابستہ انجمنوں اور تنظیموں کے ذمہ داران کی جانب سے موم بتیاں اور مشعل روشن کرکے پر امن احتجاج کو بھی طاقت کے بل پر ناکام بناکرمسلمہ جمہوری اور انسانی قدروں کی دھجیاں اڑائی گئیں وہ حد درجہ افسوسناک ہے۔
قائدین نے کہا کہ کشمیر کے طول و عرض شوپیاں، کولگام، بجبہاڑہ، ترال، اسلام آباد، حاجن، سوپور، بڈگام، کپوارہ، بانڈی پورہ، پلوامہ اور دیگر علاقوں میں نہتے عوام کو تختہ مشق بنا کر ان کی زندگیوں کو اجیرن بنایا گیا ۔
انہوں نے کہا کہ یہاں کے مظلوم عوام کیلئے ہر روز کربلا اور ہر شام شامِ غریباں کا سا منظر پیش کررہی ہے اور جب ان ظلم و زیادتیوں اور انسان کُش پالیسیوں کیخلاف پر امند احتجاج کیا جاتا ہے تو حریت پسند قائدین اور کارکنوں کیلئے زندانوں کے دروازے کھول دیئے جاتے ہیں ، ان کے گھروں کو تہس نہس کیا جاتا ہے اور پر امن طور صدائے احتجاج بلند کرنے کی پاداش میں تعذیبوں اور تشدد سے گذارا جاتا ہے ۔
ٍ قائدین نے کہا کہ ایک ایسے دن پر جب پوری دنیا انسانی حقوق کے تحفظ کا دن منا رہی ہے اور انسانوں کے حقوق کی حفاظت کیلئے پروگرام ،سمینار اور سمپوزیموں کا انعقاد کرکے انسانی حقوق کی حفاظت کی اہمیت اور افادیت کو اجاگر کررہی ہے جموں وکشمیر کے حریت پسند قیادت او ر عوام جن کیلئے اپنے حقوق کی بات کرنا اور ان حقوق کی پامالی کیخلاف پر امن احتجاج کرنا جرم قرار دیا گیا ہے ۔ اس کے علاوہ اور کوئی چارہ نہیں کہ وہ اس دن کو یوم سیاہ کے طور پر مناکر عالمی ضمیر کو جھنجھوڑنے کی کوشش کریں۔
قائدین نے کشمیر کے حریت پسند عوام سے اپیل کی کہ وہ 10 دسمبر 2018 سوموار کو مکمل اور ہمہ گیر احتجاجی ہڑتال کرکے اس دن کو یوم سیاہBlack Dayکے طور پر مناکر عالمی برادری اور حقوق انسانی کے عالمی اداروں کو جموں وکشمیر کے عوام پر ڈھائے جارہے مظالم اور انسانی حقوق کی بدترین پامالیوں کی طرف توج دلائیں۔
قائدین نے بشری حقوق کے عالمی اداروں بشمول اقوام متحدہ کے حقوق انسانی کمیشن (UNHCR) ، Amnesty international, Asia Watch, ICRC اور دیگر حقوق البشر کی مستند تنظیموں سے اپیل کی کہ وہ کشمیر کی انسانی حقوق کے حوالے سے ابتر صورتحال کا فوری نوٹس لیں اور بھارت پر دباؤ ڈالیں کہ وہ کشمیریوں کیخلاف جاری ظلم و تشدد اور مار دھاڑ سے عبارت کارروائیوں پر روک لگا دے۔

Loading...